دھان کے مڈھوں کو تلف کرنے کیلئے روٹا ویٹر اور مشین سے کٹائی کرکے باقیات زمین میں ملاکرذرخیزی میں اضافہ کیا جاسکتا ہے،خالد اقبال

دھان

فیصل آباد ۔ 04 ستمبر (اے پی پی):اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ زراعت توسیع فیصل آباد ڈاکٹر خالد اقبال نے کہا ہے کہ دھان کے مڈھوں کو تلف کرنے کیلئے روٹا ویٹر اور مشین سے کٹائی کی صورت میں ڈسک ہیرو کی مدد سے فصل کی باقیات کو زمین میں ملاکراس کی زرخیزی اور پیداواری صلاحیت میں اضافہ کیا جاسکتا ہے جبکہ اس کے برعکس دھان کے مڈھوں کو آگ لگانے سے فضائی آلودگی پیدا ہوتی ہے اور اس کی وجہ سے انسانی زندگی، فصلات، باغات اور سبزیوں پر منفی اثرات مرتب ہونے کا اندیشہ موجود ہوتا ہے اسلئے دھان کے کاشتکار کٹائی کے بعد مڈھوں کو آگ لگانے سے گریز کریں۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹر محکمہ زراعت توسیع فیصل آباد نے کہا کہ دھان کے مڈھوں کو آگ لگانے سے نہ صرف زمین کی بالائی سطح پر موجود نامیاتی مادہ کو نقصان پہنچتا ہے اور زمین کی زرخیزی متاثر ہوتی ہے بلکہ اس سے اٹھنے والا دھواں ٹریفک حادثات اور انسانی جانوں کے ضیاع کا باعث بھی بنتا ہے لہٰذا دھان کے کاشتکار مڈھوں کو آگ لگانے کی بجائے زمین میں ملا کر زرخیزی میں اضافہ کریں۔

انہوں نے بتایا کہ امسال محکمہ زراعت کی ٹیمیں دھان کے مڈھوں کو آ گ نہ لگانے کیلئے بھرپور مانیٹرنگ کر رہی ہیں اسلئے دھان کے کاشتکاروں سے اپیل کی جاتی ہے کہ اس سلسلہ میں محکمہ سے مکمل تعاون کریں کیونکہ سموگ کی وجہ سے انسانی زندگیوں پر براہ راست منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں لہٰذا عوامی مفاد کے پیش نظر کاشتکاردھان کے مڈھوں کو آگ لگانے سے گریز کریں تاکہ ہمارا ماحول فضائی آلودگی سے بچا رہے۔