صوبائی حکومتیں اور وفاق مل کر سیلاب متاثرین کو بلاتفریق امداد اورمعاونت فراہم کریں گے،وزیردفاع خواجہ محمد آصف

اسلام آباد۔25نومبر (اے پی پی):وزیردفاع خواجہ محمد آصف نے کہاہے کہ صوبائی حکومتیں اور وفاق مل کر سیلاب متاثرین کو بلاتفریق امداد اورمعاونت فراہم کریں گے، سیاسی کلچر کے منفی پہلوئوں کاخاتمہ ضروری ہے، متاثرین کی امداد اوربحالی ہماری مشترکہ ذمہ داری ہے۔

جمعہ کوقومی اسمبلی میں غوث بخش مہر اور دیگر ارکان کی جانب سے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں امداد سے متعلق نکتہ ہائے اعتراض کے جواب میں وزیردفاع نے کہاکہ سیلاب کی آفت سے پورے ملک میں تباہی ہوئی ہے، سندھ اوربلوچستان میں زیادہ نقصان ہواہے، بہت سارے علاقوں میں فصلیں بروقت کاشت نہیں ہوسکیں گی اوراس سے غذائی سلامتی کوبھی خطرات لاحق ہوں گے، وفاقی اورصوبائی حکومتوں کو متاثرین کے ساتھ یکساں سلوک کرنا چاہیے اور امداد بلاتفریق ملنی چاہیے۔

انہوں نے کہاکہ ایسے معاملات میں حکومت سیاسی ترجیحات پرکام نہیں کررہی۔ ارکان کی شکایات کو وزیراعظم اورکابینہ کے سامنے رکھا جائے گا۔ اگر کوئی تفریق ہورہی ہے تو اسے دورکیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ اس وقت سب سے بڑا خطرہ یہ ہے کہ سردیوں میں متاثرین چھتوں کے بغیر ہیں، یہ ایک بہت بڑی آزمائش ہے، حکومت کی ذمہ داری ہے کہ سردیوں میں اضافہ سے قبل لوگوں کوچھت فراہم کی جائے۔سندھ اوربلوچستان کی حکومتوں کوبھی شکایات کاجائزہ لینے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہاکہ حکومت نے کسان پیکج کا اعلان کیاہے، متاثرین کوانفرادی طورپربھی امداددی جارہی ہے، ہمارے وسائل محدودہیں مگرحکومت دیگرشعبوں سے پیسے نکال کرمتاثرین کومددفراہم کررہی ہے۔یہ ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔

وزیردفاع نے کہاکہ گزشتہ 4 سالوں میں سابق حکومت کے دور میں ہمارے علاقوں میں کوئی ڈولپمنٹ نہیں ہوئی، یہ سیاست کا ایک منفی پہلو ہے کہ مخالف اراکین کو فنڈز نہیں ملتے۔سیاسی کلچر کے اس منفی پہلوکاخاتمہ ہونا چاہئیے۔انہوں نے کہاکہ لوگوں کے کام کرکے ان کے دل جیتے جاسکتے ہیں، میں ارکان کویقین دلاتا ہوں کہ صوبائی حکومتیں اوروفاق مل کرلوگوں کو بلاتفریق امداداورمعاونت فراہم کریں گی۔