مصنوعی ذہانت کے ذریعے 5 فیصد سالانہ زرعی ترقی کی ضرورت ہے ، چوہدری احمد جواد

مصنوعی ذہانت کے ذریعے 5 فیصد سالانہ زرعی ترقی کی ضرورت ہے ، چوہدری احمد جواد

اسلام آباد۔20جنوری (اے پی پی):پاکستان بزنس فورم (پی بی ایف) کے نائب صدر چوہدری احمد جواد نے ملک کے زرعی شعبے میں مصنوعی ذہانت (اے آئی) انضمام 5 فیصد سالانہ ترقی کی فوری ضرورت ہے۔

فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی) کے صدر عاطف اکرام کے ساتھ ایک ملاقات میں انہوں نے دوہری حکمت عملی کی اہمیت پر زور دیا، جس میں فی ایکڑ فصل کی پیداوار میں اضافہ اور کارپوریٹ فارمنگ کے ذریعے کاشت کو وسعت دے کر بڑھتی ہوئی آبادی کو کھانا کھلانے اور قومی غذائی تحفظ کو یقینی بنانے کے چیلنجز شامل ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ فی الحال پاکستان کی فی ایکڑ پیداوار عالمی اوسط سے کم ہے جس کی وجہ کسانوں کے لیے جدید مشینری اور ڈیجیٹل سپورٹ سروسز تک محدود رسائی ہے۔احمد جواد نے زراعت کے شعبے بالخصوص باغبانی میں تبدیلی کے لیے مصنوعی ذہانت (AI) کو ایک انقلابی ٹول کے طور پر اپنانے پر زور دیا۔ انہوں نے دلیل دی کہ مصنوعی ذہانت (AI) موسمیاتی تبدیلی کے چیلنجوں سے نمٹ سکتی ہے ، فصلوں کے نمونوں کو بہتر بنا سکتی ہے، ٹیلنٹ کو راغب کر سکتی ہے اور اس شعبے پر مثبت اثر ڈال سکتی ہے۔