پاکستان اور امریکہ کے درمیان موجود خلا کو پر کرنے کی ضرورت ہے، ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل

اسلام آباد ۔ 10 جنوری (اے پی پی)دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے اہداف کے حصول کے لیے پاکستان اور امریکہ کے درمیان موجود خلا کو پر کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ بدھ کو ایک نجی ٹی وی چینل سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ٹویٹ کے بعد پیدا ہونے والے خلا کے خاتمے کے لیے متفقہ حل تلاش کرنا ضروری ہے جس کے لئے دونوں ممالک کو آگے بڑھنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اپنا کردار جاری رکھنے کے لیے چین اور ترکی سمیت دیگر ممالک نے بھی پاکستان کے حق میں بیانات جاری کیے ہیں۔ پاکستان کے ان تمام ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں۔ بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو کے بارے میں تبصرہ کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ کلبھوشن جادیو نے پاکستان میں دہشت گردی اور تخریب کاری کی کارروائیوں میں ملوث ہونے کے اپنے جرم کا خود اعتراف کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی جاسوسی کے ساتھ تعلق میں ملوث دیگر مزید لوگوں کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اس مسئلے کو تمام دستیاب بین الاقوامی فورمز پر اجاگر بھی کیا ہے۔ افغان مہاجرین کی ان کے وطن واپسی کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ افغان پناہ گزینوں کی پاکستان سے ان کے آبائی وطن واپسی کے لیے امریکہ سمیت بین الاقوامی برادری کو کردار ادا کرنا چاہیئے۔ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کی سرگرمیاں افغان سرزمین سے جاری ہیں اور یہی عناصر یہاں بدامنی پیدا کرنے میں بھی ملوث ہیں۔