چینی مطالعہ قدیم اور جدید چین کے بارے میں تفہیم فراہم کرتا ہے، شی جن پنگ

Xi Jinping
Xi Jinping

بیجنگ۔24نومبر (اے پی پی):چین کے صدر شی جن پنگ نے کہا ہے کہ چینی مطالعہ قدیم اور جدید چین کے بارے میں تفہیم فراہم کرتا ہے۔ چینی نشر یاتی ادارے کے مطا بق ان خیا لات کا اظہار چینی صدر نے شنگھائی فورم برائے ورلڈ کانفرنس آن چائنیز اسٹڈیز کو مبارکباد کے خط میں کیا۔

شی جن پنگ نے نشاندہی کی کہ چینی تہذیب دنیا کی دیگر تہذیبوں کے ساتھ تبادلوں اور باہمی سیکھنے کے ذریعہ ترقی کی ، جس کی بدولت چینی جدیدیت کو ایک گہری بنیاد فراہم ہوئی۔ تاریخ کے حوالے سے فہم حاصل کر کے ہم حقیقی دنیا کو سمجھ سکتے ہیں، تہذیبوں کے مابین باہمی سیکھنے کے ذریعے ہی ہم مشترکہ ترقی کرسکتے ہیں۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ دنیا بھر کے ماہرین اور اسکالرز چینی اور غیر ملکی تہذیبوں کے سفیر بنیں گے، چین کے مطالعے کو فروغ دیتے رہیں گےاور تہذیبوں کے مابین تبادلوں اور باہمی سیکھنے کے عمل کو آگے بڑھائیں گے۔ کانفرنس کا موضوع “عالمی نقطہ نظر سے چینی تہذیب اور چین کی شاہراہ” تھا، جسے اسٹیٹ کونسل کے انفارمیشن آفس اور شنگھائی میونسپل پیپلز گورنمنٹ مشترکہ طور پر اسپانسر کر رہے ہیں۔