ملک کو آزاد ہوئے 75 سال ہو گئے لیکن عمران خان کوآزادہونے کایقین نہیں آرہا، وہ دوسروں کو چور اور غدارکہتے ہیں، مصدق ملک کی پریس کانفرنس

اسلام آباد۔11اگست (اے پی پی):وزیرمملکت برائےپٹرولیم مصدق ملک نے کہاکہ ملک کو آزاد ہوئے 75 سال ہو گئے لیکن عمران خان کوآزادہونے کایقین نہیں آرہا، وہ دوسروں کو چور اور غدارکہتے ہیں، کے الیکٹرک کو 3 ملین پائونڈ لے کر ایک ارب ڈالرکافائدہ پہنچانے والا اور ملک ریاض کو 450 کنال زمین لے کر 250 ملین ڈالر دینے والا کیسے صادق و امین اور صاف شفاف ہو سکتا ہے، پی ٹی آئی کے کارکنوں نے سوشل میڈیاپر شہدا سے متعلق تضحیک آمیز ٹرینڈز چلائے، عمران خان کے منہ سےکسی نے نہیں سنا کہ شہباز گل نےجو کہاوہ غلط ہے، تحقیقات جاری ہیں جو بھی جرم میں ملوث ہوااسے قانون کے مطابق سزا ملے گی، عمران خان لاہورمیں کھیل کامیدان تباہ کرنے کی بجائے جلسےکے لئے کوئی اور جگہ چن لیں۔

جمعرات کو پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مصدق ملک نے کہاکہ ملک 75 ویں سالگرہ منانے جارہا ہے عمران خان نے کل قوم سے خطاب کیا ، توقع تھی کہ وہ امن اور ترقی کی بات کریں گے اور لوگوں کو امید دلائیں گے لیکن انہوں نے ایسا کچھ نہیں کہا اور صرف سازش کا ذکر کیا ۔ عمرا ن خان بتائیں کہ کون ہے سازشی اور کون ان کے خلاف سازشیں کررہا ہے۔ ملک کو آزاد ہوئے 75 سال ہو گئے ہیں عمران خان کو آج تک اپنے آزاد ہونے کا یقین نہیں آرہا ۔ وہ غلام غلام کی رٹ لگائے ہوئے ہیں خان صاحب ہمارا ملک آزاد ہے۔ جو آپ کے ساتھ میچ فکسنگ نہ کرے آپ اسے سازشی سمجھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عارف نقوی دنیا میں معاشی جرائم اور منی لانڈرنگ کے سب سےبڑے کیس کامرکزی کردار ہے۔ عمران خان نے بل گیٹس کے پیسے کا ذکر کیا لیکن یہ نہیں بتایاکہ بل گیٹس کے چندے کے پیسے چوری کئے ہیں اور اسے اس جرم میں امریکا میں 290 سال کی سزا ہونے جا رہی ہے ۔ عمران خان ملک ریاض کو دوسرا رئزنگ سٹار کہتے ہیں ایک نے امریکا میں جرم کیا دوسرے نے لندن میں ۔ ملک ریاض کے 250 ملین ڈالر لندن میں پکڑے گئے لیکن 450 کنال زمین تحفے میں لے کر عمران خان نے اسے کابینہ سے فیصلہ کرا کے 250 ملین ڈالر کا فائدہ دلوایا جو پیسے حکومت پاکستان کو ملنے تھے وہ ملک ریاض کو دے دیئے گئے۔

عارف نقوی سے 3 ملین پائونڈ لےکر ایک ارب ڈالر کاایک تحفہ دےدیااور کے الیکٹرک نےخریداری کے وقت کراچی میں بجلی کی پیداوار کے لئے جو بجلی گھر لگانا تھا اسے ختم کرادیا اور ساتھ ہی اضافہ بجلی بھی کے الیکٹرک کو دے دی۔ چاہے ملک میں جتنی بھی لوڈ شیڈنگ ہو جائے اس کا عمران خان کو خیال نہیں تھا۔ کیااس میں چوری اورسازش نظر نہیں آئی۔ مصدق ملک نے کہا کہ عمران خان کہتے ہیں کہ انہیں اداروں سے لڑایاجارہاہے حالانکہ سوشل میڈیا پر شہداس سے متعلق تضحیک آمیز ٹرینڈ چلانے والے تحریک انصاف کے کارکن تھے اور کئی دن تک یہ ٹرینڈز چلائے جاتے رہے کم از کم شہدا کا احترام کیاہوتا جنہوں نے اپنے ملک کے لئے جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے۔

مصدق ملک نے کہاکہ شہباز گل جو اپنے آپ کو عمران خان کا چیف آف سٹاف کہلواتا ہے بغاوت پراکسانے سے متعلق اس کا بیان بالکل واضح ہے۔ ہم سمجھ رہےتھے کہ عمران خان اس کے بیان سے لاتعلقی کا اظہارکریں گے لیکن ایساکچھ نہیں کیا اور کسی نےعمران خان کے منہ سے یہ نہیں سنا کہ شہبازگل نےجو کہاہے وہ غلط ہے۔ اس سےپہلے سقوط ڈھاکہ سے متعلق عمران خان کے بیانات موجودہیں ۔بھارت اور امریکا میں جاکر وہ جو کچھ کہتے رہے ہیں وہ سب کو پتہ ہے۔

عمران خان ملک ریاض کے جہاز پر بیٹھ کر مودی سے ملنے جائیں ، ملاقات کے لئے انتظار کرتے رہے ، امریکا میں ٹرمپ کے ساتھ کشمیر کی سوداگری کرکے آئے ہیں۔ امریکی صدر کے فون کا انتظار کرتے رہے ہیں تو وہ وفا دار ہیں اور ہم غدارقرار دیئے جاتے ہیں ۔ عمران خان دوسروں کو چور اور اپنے آپ کو صادق اور امین کہتے ہیںِ۔ لوگوں کو سول نافرمانی پراکسانے والا اور مار دھاڑ کی باتیں کرنےوالااپنے آپ کو صاف شفاف کہتا ہے ۔

ایک سوال کے جواب میں مصدق ملک نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی نے شہبازگل کےبیان کی مذمت کی ہے۔ ۔ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ عمران خان ملک میں وافر بجلی کی باتیں کرتےتھے بتائیں کہاں ہیں وہ وافر بجلی اور گیس ۔انہوں نے اپنے دور میں بجلی کی پیداوار کاکوئی منصوبہ نہیں لگایا۔ ملک کی 75 ویں سالگرہ پر وہ کیاکررہےہیں۔ انہیں کیوں یقین نہیں آرہاکہ یہ ملک ترقی کرے گااور آگے بڑھے گا۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ گرفتاریاں قانون کے مطابق ہوں گی اورایسا نہیں ہوگاکہ کسی کی گاڑی کو روک کر اس میں ہیروئین ڈال دی جائے اور کسی کو بے گناہ کال کوٹھری میں بند کری دیاجائے ، تحقیقات جاری ہیں جو بھی جرم میں ملوث ہوا اس کے خلاف کارروائی ہوگی ۔مصدق ملک نے کہا کہ ہمارے کھلاڑیوں نے دولت مشترکہ کے کھیلوں میں شاندار کارنامے انجام دیئے ہیں لیکن ساتھ ساتھ انہوں نے سہولیات کی کمی کابھی شکوہ کیاہے ۔

بہتر ہے عمران خان لاہورمیں جلسے کے لئے کھیل کامیدان تباہ کرنے کی بجائے کوئی اور جگہ کا انتخاب کرے ۔ وزیراعظم نے کھلاڑیوں کو سہولیات دینے کا عزم ظاہر کی ہے ۔ امید ہے کہ صوبائی حکومتیں کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کے لئے اقدامات کریں گی۔